اقرا من غرف میٹ ارد و پازا لا قور فون:042-372242728-37221395

ا ر سس ھا سس سے اب ا ےمم 0 > کی ق کے۴

ای یں سے حر رید ہی ہپ سر رید یہ رج ڈیہ کید یہ سر ری ہی یہ یل

و کک مکح ان وم وی کت ا : کے کے ہچ کی

1 1 شید الہ بب 2 ۲ 0 فقیە لحد اش دعل یط من الف عاب 0 کیا و

٤‏ اھك ا

ره وشیع ارو

) کےا ۸ےا 2 سے 8 ve‏

FDS

سے کی کیہ ے۔ نے ۹ سے ی

ك ار

ھم ك3 + ا ۳ 26 اس کے

9

ر کیم

۷

۲ کے جو ہے

لن

0 3 9 ۸ ازبا اضل ما کناب الیرم

ف ٠ٰ‏ RIES‏ ان پیر اذنغان ایکا هيل عنوانات وتخریخ میا فای یق دی وف لا باشعا صاصب

٤ 7‏ کر ر ر 3 2 مہہ

۸ ۱ ا اقرا سن خرف سار .اوو پازا لاور ۱

ا بت —_ سم

ن

یں یچ

ٍ

س8ت

سے از کرت سے کے

چیک E‏

۰٠سج‎ ۹

ںو 0 ر

0 +

2

کے

< ہے سے

۸

1:

ام ہر ےم گی ۰ اک دا سے کے چ

ےھ سے 0 ۵

۶

۲ رہہ

ہے Sto‏ وت

یڈ

ور سے

پا جم

نہ

MANTABA-E-REHMANLA‏ قون:042-37224228-37355743

70

یا

کے a‏

کے کے مم نر کی سیا ید ا یڈ کت حر یکن 2 to‏ سے fo e‏ 34 اریہ سے رہق E‏ کے و GEE‏ ری ف کس ی سیت

ایک لان جان اوج ےک رق رآن مید اعادیث رسول طف اور جرد ٹیکتابوں بی پش یکر ےک قو ربھی | خی ںکرکتا و لکرہوے وا فو ں کی ی واصلاج کے ل بھی جوارے اوار وی نعل شم ہقائم ہے اور ` کیک ینا بک طباعت کے دران اغلا اک کج رسب سے زیادوتقجرادرعرق ریز یک جا چ تام کہ یس بکام انسانوں کے پاتھوں ہوتا سے اس لیے کی کی کے رو جا ےکا امکالن سے ۔ بدا قار کرام س ےکر ارش ےک اگ اسک یکو “ی نظ رآ ے ت اوار وع فر ما دمیں اک ہآ یرہ اشن میں ا کی اصلاح ہو کے۔ کی کےا یکا م سآ پکاتداو ن صرت جار مگ( ادارہ)

امرف وی ات

ام کیان

اروا سوا

| جاندروںوکیڑوں شم

ا وان کے دسح وی اط راف ونر ہک تق ص2 د

| ادا کی کے وف کم فہ کے موجون مو ےکم فآ ووی یک یکم

اورک ادا یکی ردا کے تھ تق سلم الم می مت کے دان ہون ےکاشرط یی کن ر مس ند ے کین سک نیلم

مق تلیم مس اشتلاف ہو نےکیصورت ام لیم میس اختلاف ہو ےکی صورت | عم مس فی شرط

ہج ت۴ کت

ISE NA

ان قرفا تکابیان جو ت ےم یں ہیں

انت رفا تکابیان جو قت کےعم میس ہیں

ان تصرفاتکابیان جج ےم ٹس ہیں

عم کےا تقا ل کی ایک نای صورت

ر یکر دو پا تر ی کےفوت ہو جا ےکی ورت میں ا قال کم غیت بیس اختا فک صورت میں قول مع ر س کا ہوک

سل مکی میحادییش اختلا فک سورت میں قول مرک س کا ہو

زو ںیلم

مل فیا شیا لو مک رن ےکاضابطہ

تنا م

سنا میس تیا رک موی نز کے لی کا خیار

اسن اور رل

مسائل منثورہ ٣۳ھ‏ وں وی کی تن

ر اب اورت یلق ۱

| ش٥‏ نکی انت کے س ات بن کارا

خر یشدہہ ند ی کال اش یا حکرانا

| لاش اب ہو جانے واشت ری اعم ذکورہ لام مشت ری دوہو نےکیاصورت

| کن معروف کے سن ہون کی کٹ | کی ادا نی میں وص ف بلاط

| کش تکار کی ز مین میں نے وا ےم

١‏ مد سی اک یکنا ب تق صرف کے اکا کے مان کے ر

ا مر فک تحرف اور وت

ا ضرف کاطریت

| سرف میں تاب لی شر

کم وزان اور یرای ہو ےکی شرط ان ب تھے ے اتر کم تقو وی خلا یس الیل ےب و ام E‏

صرف ل ن کا صز کر

“٦‏ ریوک اید 0

2 . 7 ر لے 0 کنو یجس ںان کشو طط اس انان کے سا تج

کہ راج ا لوق تکی رگا ری کک جن سونے ا ری سکھو تکام

سوئۓ پات دک کوٹ کے نالب ہو ےکا متلہ کھوٹ وا کوں کے مھا ےے س ۶رف کا کے اح درا م ےو ہو چا ےکی ورت روإںٹھوں سے بد وغروشت

کور ہپ لا سے می س ف٢‏ رخ کی مور ت

درا ہم اورٹلوی کے زر یی متا ےکی یک اح ورت

کفالہ کےالغوی اورشریی معالٰی کفال تک یں

الفا اكنال

الفا كنال

کلت پان سک قیت ملقو ل جف ارز اد

۰

کی ین من ان مار دآ

کی جل می سیردا ری ےک وب جا مانو ل وت ً کفاات )ای بی سبل و یکی ایک صورت

ُخرا کی اوا کی می کنات اوررکن زا جا

| کفالہ الال

| کال الال میں مغو للکااختیار

| ایل ریت داکرددما لک بوصو ل رکا ے

1 کنیل اپااداکر دوبال کب صول کے

| کیل ےم طا ہکی صورت میں سکول عنہ ے مال کر کاخیار

کنیل یھو لح نکی برام تکادوسرے پا

زور وپ الا ست یں مولا ہم خ رک ن نکی صورت

| شی لی راہ تک لف سورس ر نز وت ماف خی وک

یرادت

ات اتک فا

تا جر وک یکفاات

کنات میں تو لکر ‏ ےکی شرط

مرکو ہالاشرط ے اسشاء

میت کےفرضو ںی طرف ےا زخو یل بنا

کفال تکی یک نا ع لصصورت

دک تم کے 0 رشبل ا یک وتجارت وترو ٹیس استعا لکرنا RITE‏ وخی رہ میں استما لکرنا

ل ےت

تا کفو ل ےیل ےد نکامطالہہ

اقول ع کن ےر کا

کیل الد رک کاب می کردار

۱ فصل فی الزمان اور ضار ہت می بیک وقت دونوں ہاب ےہ | دارہوٹا تس وا ح کا مطا اب اورعطا لب بنا کی رار کن وکا ضاصحن مون قر غ ےکی فو ری اور مل اوا کی می اختلاف اورقول 2 EE 01‏ فان ہہ ہکا (طلان

باب كفالة الرجلین

٤ 1‏ س7009 ویو ں ک معایلہ

| یک وت عق کا کر نے دانے دو ملامو نکی پا بھی

ر آنا می ںھجتھز E‏ ہے

۱ اکر را رسوں سرک دیو ںکا

امال وو یاون شن ای ںاو ری ر ی رات مفادض ےش ریو ں کا ریم

LE EE |

ام کے وھ مین آ زار ہوگر ارا کے دا لٹ مال یکی | كنات

ازور ہپ الا ست یں غاا مکی مو تکا نے

| کور پالاصورت یں فلا م کے رت کا وٹ یکرنا لم اورمو لی کی با وھ یکنا لت

2 امل )کیا ت

2 ا کل وت 6

کنات باب كفالة العبد وعنة

وان 'میړان ل اور یل جواز

| الک شراسا

| الل ہو سے کے بح ریلم تال لکا دال ےر جو غکرنا ”وی شیر

ا ماوق £ ےم وو معا ا

۱ ١

9r ۹۵

٦

ے۹

re

ر

تیل اتتا ل لہ ے مال حوال کی صیذیت کے بارے میں

اخاف حول مره 703 0 )کرو وہونا

قا کا پر رتو کر

ضا کا عبر وتبو کر نا

تہ ٤قاط‏ بکرنا

سلطان ار ےہ ہہ قضا بو لکرنا نومت ررش ر قاضی کے اون راش

تیر اوں کے احوال میں کو کر ا مال اوراوقا فک دک بیال جا مسچد اگ مورد نایا چ یٹنا تی کاب تمو لکن تی کے موا شری اتات تی کے ےآ دا ہنشت و برا ست گوا واوش نکر تن کیا لہ فضل فی الحبُس

تی ہک نے می جلد با زک نکر ےک اعم

۲ ۴

ا if‏ 3 1 1 1

تی ماب بر قاجا ےا کر ری و

اوا رر ا ت مودو تما می رکا عرم جزاز

دجندگی اوردلوالیہ رن م ری

اوک یکا نفقہندد ےۓ وا نے شو مکوت کر ۱ ۲۴۲ 9+ ہ0" ٦‏ باب کتاب القاضی إلی القاضی | ے٣‏ نزمر

کسی دوسرے ق ضی کا یکن صورتڑں میں ال استشہا و | مسائل شتی من ن كناب القصاء ہوا ۱ پالاانے کے کینوں کے قوق وف راکش

| ا نو ک جیا نین میں تا ب القائض یکو ججت ٠ء‏ راف | اک خوارعاویکیات ےن ق

کا ب تق ی کی قو ایت می کوان یک شرط ادا عق

| بق کی ذمداری ارک

| کا ب تاس یکو مکی مو جو وی می قو ل کر ےکی شرط | تشاددعا دی وشبارا ت )گم

کا ب قاصی لک ےک اط ریت کار

٠‏ شت زک کے یدنے سےا کا رک ےکا | صد ود وتاک می سکاب تا یکی عدعقجو لیت

کک سے بے مال یکر ےکا اکنا

١‏ فصل آخر ار ارز کے کے بعد دوگ یکرنا

| کور کوقاضی ہیا رگ سے کےعرم وجود کے قا ی بعد شل برک ٥و‏ کے بین اض یکوانا خی رک نے کااختیار لا ےا موی نہیں

| ای کے لے کے فلاف ال ہونا وکو سے کے عدم و جود کے قال بعد یں برک ہوئے ب بین نی کے لے کےخلاف ایل ہوتا لا سے حرمو ایس

ذروشت ت کر ےکا انل بعد می براء چک نکل العو ب بلا ےوک ہوک

| فا یکا فیصل ہا ہرد بالن می ناف موی | ذا مب نس کےخلاف فص لک م

ےکا اکا ہک نے کے بعد غا ہونے دالے ری میک ہو ل کے !عدا ن شا ای کنا ا ۲ + 0 جەھ ٭ 2 علی کا یصلہ فصل فى القضاء بالمواريث

مراف اون رک می را کا دو یکر نے والی نوس ےک فصل میرا ت طل بکر نے وا ی سلما نکی نول ساب مراف 00-7

| یں کےاموا کور برد ینا باب الُحکیم

مان ت کا اقرا رک نے والا تياد ETE‏ کت جاور اد کر مال پچ ردنا چاے ۹ | رضانم

اکورہ بالاصورت می ںی دوسرےآ دی کے کے اقرار | ے۲۹ | ڈرکورہہالامنلی م یک ئن ایم

ر ا کا ےشن نام فصل آخر

وا کے ص او ری می راٹ ای کا یکوکوئی صد ی صا اتھکر ن ارد بنا اتسور تقول رسا وسامان بے وگو یکر ےکی مورت عراز مخز وی تی کے ما مات

| کور دبالا ورت شل وا رٹ نا ب کے1 ےکا نے بح راز مح ز وی ق شی کے نا ات

| دصت بی لف ”بال س ےکی مراد موک بعر ا زح زو ی ق ی کے تا مات

سیت ٹل کیت ےکیامرادہوگا ٣۰‏ | بحرا ز محر وی تی کے من عصمات SS‏ پھ راز محر ول تقاصی کنا صمات

وکی لاحر و یکی اطلا ع ےک صورزت

ر ابد ہن 2وج ر سہ جو اس یں

ا الم یجاب تنعل کے احا م کے بیان شی ہے

صاحب براہہ جب ان یو کے بیان سے فار ہو گن جن میں کوان یا اآحدالعوشین بر قب ہک نا شر یں ےت اب بیہاں سے ان بیو کے اکا م وسا جیا نکر سے ہیں جن س کون یا آعد الع ون بر کر ن لا زم اورضرورکی ہے۔ اورک صرف اورت کم ہی میں عو ب کنا رور س ےکر بک کے سلم میں صرف ای ک ویش میتی راس الرال یق کرنا ضروری ہے ج بک ہک صرف میس دونو کوش پر زع کر نا ضر ورک ہوتا ے اس لیے اس جوانے ےک کم مغر کے در جج میس موی اور صرف ع رکب کے در جج میں موی اور ہے با تن آپ بہت مل سے چا سے ہی لک شرب راب سے قرم اتا ےی لیے صاحب دای نے موی ام اکا دا لکوم کب ن ع صرف کے احا دای سے پل یا نکیا ہے۔ لا یش رت ن داع )زا الحا لم کےاخوکی :بيع یتعجلٌ فيه الشمن نی وو جس می سم نو ری واجب الا داءہوتا ےن اسم سے اصطلا ی ی: اخ الاجل بالعاجل یی نارای لین _ اس بی سس چٹ را صطلا ما ت کا یلوج ہیں : رب السام : مال دا کہلاتا ےا سک وس اورصا حب ورا مکی کے میں e‏ اک کہ کے ہیں۔ مسلم الیھ: عات رآ ہلا ے۔ راس المال: درام وونائیراورنتو دک نام ہے۔ مسلم فید: دہ اشیاء ن عقوا نے مون یی ےکن اورآناٹرں ٠‏ بيع سلم كا حکم: ثبوت الملك لرب السلم في المسلم فيه مؤجلاّ بمقابلة ثبوت الملك في راس العين أو الموصوف للمسلم إلیہ نمعجلا بطريق الر خصة دفعا لحاجة الماس . (بنایہ ۲۰/۷ ن م في یس ارب مول رب |سلم کے ی ایی کل ت کا مورت جوسلمالیہ کے لیے بطو رٹل سی ن کرو و را کی امال یں خایت ہو ہے۔ اسم عفد مَضرُوْع , بالْکتاب وهو ايه الْمَدَاّة ققد قال ابر کی ہے الله تقاٹی حل السَلَفَ

ر رر رڈڑ2ھ ر 1

و یٹ 3 7 ر ےو 2 7 الضمُوْد انَل فيو طول ایو في ابه رتلا قر تعالی یا أب يا اني ین امنوا إا تدا نتم بدن إلى أجل

اسا

و و وت

(SILLS رجا‎ SOTO Hal ر‎

رج ہے ووو رو ۔ کٹ

7 ص ص اأا گے ۔ سے سے ل f‏ ر3 ]۰.۳1 7 52 - مسمی فأ كتبوة الأية (سورة البقرة : ۲۸۲). وبالسنة هو ما روي انه عَلي السّلام ((تهى عن بیع مالين و

ا

نة اسان وَرَحَصَ في السّلم))ء اياس ون گان يابا لکنا ركاه ماروي وَوَجه اياس اله يع TEDE‏ تنجد: سل مکاب ال ےش رو ع شر ہعقد ے اوروہ ( کاب ) آ ت مد امات ےنات رت این عبا ی لا نے فر اب یج سگواہی دا ہو ںکہ الد تی نے مل مو نکوعلا ل قر ار دیا ہے اور اس جوا کے سے اپت کاب می ایک ط و لآبیت ازل فرماکی ہے پھر حطر ت امن عا ی نٹ نے اید تال کا تو لیا أيها الذين منوا إذا تداينتم بدين إلى أجل مسمى فاکتبوہ تلاوت فر ایا

اورم سنت نکی روغ ہے اورسنت جوم وی ےک ہآ پٹ نے اڑا وف روخ تک نے سے فرمایا سے جوانسان کے پا موجو دن مو اورت سم سے تلق رفص رمت فر ای ہے۔ اود پر چن رک قاس بی لمکا کر ےکن م نے انی روایت وو کی وج ے تا کور فکردیاے۔ اورقا یک دک ل ید ےک معدو مک تا ےکم فی یج ہے۔ اللغأاث:

«إعقد ‏ معالمہ۔ طمدابن ہہ با ہم فرش دہندگی کا معالم۔ ب[ السلف ) افظا: پل مراد سک رای پیل ےکی سك ین سلم۔ م[تداینتم ٦‏ یں مقر د ہن یکا مھا کرو فا جل ت طاصسمی مت رو تی و رخص ہہ رضت دی ی ہے۔ وایاباہ ا س کا انکارکرتا ہے۔ ْ 0 اخرجہ الحاڪم فى المستدرك باب البيوع» حدیٹ: ۲۱۸۵.

ِ/ ریف اور وکل اشجات: ۱

صاخ بتماب نے اس عبات میں ئن سلم کے جواز اورنھو کو رآ وسنت سے مآ نگ اورم راو قر ار دیاےء چنا فرمات ہی ںک ی تاب اشک آیمت دانیت سی یا أيها الذين منوا إذاتداينتم بدین الى أجل مسمی فاکتبوہ الخ ے ابت ہے اورال بو تکی سب سے بیع ولیل یس مفسر من سیدنا خضرت ائن عباس ٹیگ کا دوف رما کرای ہے جوعبارت مس در ے اورا قط أشھد کے سات اتھوں نے شہادت دی ہس کا مت برا بشت تی فت اا مھا کر ے وتك اس ےکن اور قیفر ٹیس لا ےکم دیا ے اورا ںآبیت سے ادڈدتھاٹی نے تی مل مکحلا ل ق رار دیاے۔خقترت این عپاس تا کرای سے بی لمکا شموت اس طر حبھی امت ےک اقتا املف :الم کا تراوف ہے او رامو ن سے م جل پا واجب ف ال زمر مراد ے اور ہے دولوں یں م کوٹ اور چواز ی بردلا ری میں ءا ےکی لم ہیں لم زموگل ون ے اورم الیہ کےز ے واج تھی مون ےنا امو نے خواومویگل وا لئ رادلا جاۓے او اڃ ب نی ازم والا “بتر روصورت اس سے تق ×7 کا جوا اورشھدمت ہو جا ۓگا-

0 ناب جلررة جچچ IEEE‏ بیو کے ام کا کا مان ۲ وبالسنة الخ: ت ج سک کاب اہ کے ساتھ ات نت رسول او س ےکھی کیج سل ما د مورت ہے چنا چ عد یٹ ث انا ل عدوم جرک یچ ادروخ ت کر نے ےئ کیا کیا ہے ادر ہر چن رک می ت کم می سبھ یم معروم مول TT‏ حر ت مو نے لوگوں ای عا جت اور رورت کے پیش نظ یع سلم ۶ 9 اک سے اس لیے دو ہار ہے حدعٹ کاب بی موجود کر اس سکع کی دوسرکی مد ی رت ان عا کی ولا سے مرو 0-9 أسلف في شی فلیسلف في کیل معلوم ووزن معلوم ای اجل معلوم ن جوش ب مل مکرنا پا ہے اسے چا ےک علوم یل ہمعلوم وزن میں معلوم رت کیک مل مر ےہ اس روات ےکی مل میا جوت بی ہوم ہور ہا ے الت از رو ے قیاس مع لمکا جواز برا سے رو ۶7 نون ك ہے وو معدوم ری ے او راگ ری موجودہونان ب کی میں شب یا 1 ا 0 برد پاد د نہر ق اس مو جو کی کی درس ت نیس سذ محرو مکی کے ت برج اول درستننیں موی ہکان چو ں کت رآن پاک اورعد بیٹ اک مل مل مکی اجازت مر ت فر ای ہےء اس یق رآن وحدبیٹ کے کش نظرریہاں تا کور کفکرد گیا ہے۔ ا َھُوَ جَارٌ في المَكيلات وَالْمَوْزُونَاتِ لِفَوْلہ9 اقا (رَن اسم منم 2 علوم روزن

ہے ووو دو وو 7

علوم إلى أجل مُعْلُوم)) وَالمْرَادُ با لمَوزوتاتِ غعَيْر الذراهم وَالاَیر 2 امان > والمسلم فيه

أن کون مُت َل يصح السَلَم فيهماء ٹم قیل یکو باطلا وقیل ينعد بيا ب ک2 يمن مکل تحصیلا لِمَعَقو الْمعَاقدَيْن بحسب گان » وَالعبرة في اعود لِلْمَعَانيء الول اَصَخٌ لن التَصْجِئع إنما ازب ا یر من ذل. تنجد: ہے ہی ںک لع میا ت اورموزونات ٹیل چائز ہے اس ل ےکآ پ تا کا ارشا زرا EE‏ کمک سے اسے چا ےک ن پھانہ اور ین وزن یل ن حر تک فکرے۔ اورموز ونات سے درا تم ددنانیر کے علادہ مراد ے کیہ یو رشن ہیں ج بک سکم فی کے لے نا روک چ ای لے دداہ ودای یس کک یس موی ۔ کچ کہ اک کہ زان میں بے سلم )با ہوگی۔ اوردوسراقول ہے ےک الامکان عاق بن کےنقصودکو ی س لکرنے کے لیے ادہھایسن کو کے عق ہو جا ےکی نوس وہ وج مو ٹس میں عا ین نے عقدکولا زم کیا ۔اوریہاں یں ےہ اللغاتث:

۾ کیل 4 ياد الما )امك ؛لقووء نیز یاں Sr EE‏ ا ترن.

9 اخرجہ مسلم فی كتابة المساقاة باب السلم حدیث ۱۲۷ء ۱۲۸. و ابوداؤد فی کتاب البيوع باب فی

Ll SRL NYA ر غاب‎

السلف» حدیث: ٣٤٣‏ والنسائی فی كتاب البيوع باب السلم فى الثمار: حدیث: .٦٦٤٤‏

عم فیکابیان: ۱ اص عبارت 2 کے مقام او لکوبیا نکیا گیا سے مم کا پک ہے س کہ ناپ تو لکرفروش تکرنے وال ہر ہر سن ا تا ے بشرطیلہ ناپ نول معلوم اور ین ہواورین دی نکی رس تھی معلوم او رین ہواورہے جواز ای اکر کے اس فربان مقن کےثابت ے من اسلم منکم فلیسلم في کیل معلوم ووزن معلوم إلی أجل معلوم۔

والمرادالح: صاحب ہہراىیفرماتے ہک تد وری می جوموز ونار تکا لفظ آیا سے ای سے وراتم اورداتی ر کے علادہ کر وزلی زی مراد ہیں ۔اوردراہم ودنا نی اکر چرموزون ہیں کان چ کی ان س کم درست اور انیس ہےء اس لی ےک درا ہم ودای بیس اگ رای ککسلم ادرو ور ےلو رای الال بنایا جا و اتی وقد ری وچ ے ادا رمعاملہ ہوک ام سے اور اگ رصرف وراتم یا صرف دنار یلم ف راوررا س المال متا ا ےو دہ ر اورک ی دونو کا اج ر ہہوگا اورا کی صصورت می کی ا وجار موا کر نا ہوگااور ہیی تام ے۔ دو کی رای لاذ مآ نگ کردا ہم اورونائیر ولول پیرئی طور رشن ہیں اب اگ رکو یک سکندم وره کوراس المال قراردیکرایں 7 یہ ہنا وا کے ہونالاز مآ سے کا جواس کے موسوم لہ کے فلاف سے انس لیے اس جو ائے ے بھی ان میس بی سلم درست اور چائزنیں ہے۔ ٰ

ثم قیل یکون الخ: اک ی کل ای گرم او ردیل اورا کی الما ل قرا ردیااوردرا نم دا رکلم ی مج قراردیا تلاپ ر ےک بی کت درست نیل ےک نکیا ایک دنگ یکاکوئی دوسراراستہ ہے پاک ؟ او رکی کشم ور هکوخ قرار ویر ن وکل کے کوش بج درست ہوک سے؟ اس سیل میں تعضرا تفہ ء کے دوقول ہیں : ۱

)١(‏ پہلاقول جوجسی مین ابا کے دہ ہہ س ےک ورت ستل میس جب تع کم چا یں ہوک تو ووسر یکوگ بھی کے ہا نر نیس ہوگی ء بک رعق ری اگل اورواجب ال دہوگا_ :

(۴) دوس راقو مہ کہ یہاں کم چا رکا ہے من تاد بین نے اس سے لین دی یکا قص کیا ے۔ اس لیے اکا رمک ان کے قصد جیدگی سے غو رکیا جا گا اورکنرم یا < رکو ےشن اور رای المال قراردیاکی تھا اسے ا بی رار در موگل (ادسار ) کے گوس اس یں لوچا تر ار د ے دیا ہا ےک یدگ کے اس مکوکنار ےکر کےبھی ادھارشن کے کش موا زل کرم کن ہے او ریک تقو وی چو ںکمعانی یک تپا ر ہوتا سے اورالقا طا یکو قیق یں ہوتی ء ا ےک نکی طرف اظ کرت ہو ے ا ےک ن مو مل قر ار ویر ورس کر دیا ہا ےگا ا س قول کے وال اوک راش آلا (بنایہ ٤۲۳/۷‏ وهكذا فی النھایۃ)

والأول الخ : صاحب بدایفرماتے ہی ںکہ کور م دوفو ں تو لوں یں سے پہلا ی سی بین ابا نک تول بی زارو او رر ور ہے اوز او جا نکری عکودرست قرار دینا مس ےکوی کی کی کہ یں ل شنی ریت ر ارد کن اس کے لیے را مکا یکو کی جائی سے یکن صورت متلہس جب متعاق بین نے دداہم یادنا نی رکلم فیرادشع قار کنل ہی کے اتب ںی کروی تاب ا یکو ٹک رن ےکی ہر دائیگاں موی اس لی ےک درا ہم ودنانی تی طور بیشن بماۓ ۱ کے ہیں اورو یھ یبھ یچ یں ہو کے ...ایا لوصا جب لباب نے لان التصحیح سے اج رک اك کا ہے۔

ر ÛÎ‏ می ILL ORS $Y‏ ج

سس سے بے 2 اود 0 کی کا ود و‌ وگ اب ً5 0 سس سے لی پر وس سے

ل ركذا شس سی سر رر الغو رال ولا بد منها رع الجهالة ر ک2 ۲ E‏ ورد

فَيتحَقفق رط صخة المَلم > ركذا في الْمَعْدُوْدَاتِ الى لا تتفَارَتُ گالجوز 27 لان الْعَددئ م س 3 ?ور ا د و 3 r‏ ےہ 5

المتقًارب معلوم مضبوط الوصفب مقدور ال لیٔم يجوز السَلَم فيه» والصغير واا بير سَوَاء باصطلاح

ای سم

الاس على إِهْدار الَقَارُتِء ب بخلاف ب اطخ والرمان» لان يَفَارَتٌ احَاده تَفارتا قَاحشًاء ء يعقاو ت الأحَاد

سے و دو

في الْمَاليَة رف الْعَددیٔ الٰمَتفَاوَتٌ, وعن ن آبي خيب ايء ا انه لایجوز فى بض العامة ik‏ مارت اص ۔ س رلاڈ5 ےل 5اس رہ َ‫ دود یی 9 ٤‏

احَادَۂ في الْمَالةء قم کمَا يجوز السَلَم فیا عَددا تجوز کیلاء وقال زکر طا لایجوز گیا ۷ة عدي ولیس بِمَكِيَل؛ ء ونه ان يجوز عدا ضا لِلتفَاوّتِء ولا أن الٰقْدَارَ مره يعرف بالعَددِ وتار ة بالكْلِء

ونما صَار عدوا بِلاصْوطلاج کور مکیاد باضیالاجه رگا فی الوس عَدَ٥ًاء‏ َيل هذا عند ابي

ہہ وسے اید ٤,‏ 9< وو وی رورو اور rS‏ حنیفةتز ايه وابي يومف ماه پہوں يجوز رلانهما اْمَانء وَلهمَا 3 ية في ووو وراو ويول

حَقْهھمَا باصطلاحھما قبطل باصطلاجهماء ول تعر راء وقد رتاه من قبل تنجد: فرماتے می ںکہگزوں سے نے وای چڑوں لبھی (سلم ہا ے )وگ ناپ :فت اور بناوٹ بیا نکر کے یں م اکر کن ہے۔ اوران پات نکیا نکرنا ضروری ےا کہ جہالت دور ہوجاۓے او رګم کی ینف جو جات :ےی ی جانے وال ان چچزوں میں کی ( سلم جائز ہے ) جاو ہٹس بے اٹروٹ اورابڑے٠‏ کوک عددی قارب محلو م ا مق رار بول الوعف اورمقدور الیم ہوتے ہیںءاس لیے ان میں سکم جا ہے۔ اور ناو تکا اختبار نکر نے پرلوگوں کے اتا یکر لی کی وجسے (الن میس ) کوٹ پڑا یراب ہیں ۔ برغلا ف خر بوز ہ اورانار کے ؛کیوککہ ان کے افراد یس بڑا ا شتلاف موتا ے اور ایت ٹ شآعاد کے مفادت ہونے سے عرو فاو تک شناخت موی ےب

جحضرت امام ا لصیف بل سے مر وک ےک شت رم رر کے انڑوں می سیل ا نہیں ہے ؛کی وک ہراس وت ہودئے ہیں۔

چلرعددی تارب میں جس طرح مک نک رسلم جا گا ے اییے بی نا پکرھی جا تد ے٢‏ امام افر مائ می ں کنا پکر جات ون ےتا ن و ان ایک ات ےکن ی رن ےک فا د

۷۷06ھ "0 کیل سے و سے اودمہ چڑلوگوں کے اا کی وجہ سے دی ہو ے؛لپذاعا بن کے اتقاقی ےکی بھی جا ےگی۔

اور مرد کے حاب سے فلو مںپ یلم ہاچ ای قول بی کہ رن حرا ین کے ھال ہے ج بک۔اما م کے یہاں چا یں ہے »کیو فلو ں ن ہیں ۔ حصت رات تیر کی وبل ہے س کہ عاق بین کے ہن میس فلو ں کا ہون ان کے اتان

2 ا جلرؤق ا لان 00ا ا EOE‏ بیو کے اکا کیان : کر لے سے ہے اپا شحفیت ان کے اتفال ے ا ل بھی ہوجا ۓگی اوروژف ب قووش کر ےک د اوراس نے ےم اے بیان لیے ہیں۔ طمذروعات گر وغرہ کے فیچ ای جانے والی جنزریں۔ دلاصنع ة پچ کارردائی ؛ کارکز ارک باوت ۔ جوز ) اروٹ ۔ بیض ٭ اٹہ ے۔ چاعددی تقار ب وہ اشیاء کاک نکر معا لگیا جانا ے اوزدہ با جم ایگ و ہیں- [اصطلا ح) بای اتات را٤‏ هدار یہ ےن کرد ینا۔ طبطیخ غ بوزہ۔ فر مان پچ انار۔ عات اس مکا جواڑ: صورت ستل ہے ےک چم طرر موز ونات اورلیلا ت می ئن یلم ام اورثابہت سے ےی ذروعات سن مر یں گے نا پکرخ یدک بی جائی بن ان س کی کم درست اور جاک کوک بن مس مکی صحت اورا کی شرط تتن کے لیے ترارش اورمصطح کا معلوم بہونا ضروری ے اور فرروعات ٹل چو کہہے چ رب آل معلوم ہیکت ہس باطو رکا 6 ا سکی مقدارمعلو مکربی جائۓ پإطول د۶ی میا نکر کے مقار چان لی جا ء ج دت اور رداء ت بیا نکر نے ےصغ ملو م کر لی جاۓ اورموٹا امار ہو کو ہیا نکر نع اور ہثاو ٹکا پد الا جائۓے اورا طرب ہراخقبار سے ای کے شدوخا لیک ولم ہوچاۓ اور یی 2 مم کت کے یی شرط .اس لیے جس نوم می ںبھی ہے چزمعلوم ہو جاۓے اوراس کے اقرا ابت وروی تغفادت ت ہوں ا نوج بیس بن کم درست اور چا وی لیے صاحب بدایفرماے ہی ںک اتروٹ اوران ے سی م درست اور جات ہے یوگ ہگ کر یھ ے اور بے جاتے ہیں اوران کےآعاد وافراد ٹیش الت کے اظظبار رے فاو ت نہیں ے او رگ ران میں کرم کی شر کی موجود جال I‏ ,علوم التق رار اور غبو رز الصف کے یں اوران کے لن بین س کی کی طرح ککوئی ڑا اورہھکڑانڑیں ہے۔ الہتد ا نکی سائز اور مقدار می تعو یہ کی زیادلی موی گر چو ںکراووں کے یہاں ا کی یاد کو ایر ونود کی وجرے قبت کول رز یں پڑت اس لے اس سے ان چیڑوں میس ئم سحت پرکوئی آ نی ںآ ےگی۔ اس کے برخلاف خ بوزے اورانا رکا ستل ہے توان دووں میس کی کم چا نیس ہے »کیو مالیت کے اتتبار سے ان مل اوت ہوتا ے اورلوگوں کے یہاں ال او تک اپار “ی ےء ال مان ہیں سلم ہا یں ے یں ے عددی تارب اورعرری غات کے درمیا ن فرق ی 21 ہوک ا ک نیس عد پر کہ افرادکی مایت میں لھادت نہ مو وہ عددی شقارب ے اور بس مدکی نز کے اف راو مالیت مل تاوت ہدوہ عددی تفذاوت ے۔ رک ا الخ :فراتے ہی نک شترمرغ کے ان و ں کیک یملف اک اورمق دار ہو کی ہے اوران میس ابت کے ا تار ے ناوت اورک یش بھی ہو ا لیے حضرت ابام م وٹ سے مردکی ایک روابیت طا ان میں ی سکم جاتر ے۔ ۰

g‏ و اھ رہ دہ AER‏ وھ

ٹم کما الخ: ا کا ماگل ہے س ےکر عددی تقار ب اشیاء یس جس ط رح عرد سے کم چائز ہے ایی ےکی ل اورناپ ےک جا ہےء ال لیک جس طر عد سے کک رن ےکی ورت یل مقدارہ وصف اورصنحعت وقیرہ ہہ رای معلوم ہوک ےء ای طرحع کیل سے یی ےکی ورت لبھی ہے زر یں ہہ سای معلوم ہوک ہیں ٠اس‏ لی کیل ےبھی ا نکی تی سکم درست ہے۔

اس کے برخلاف امام زر وی کے اس لے بیس ددقول میں )١(‏ پہلاقول ہے ےک محر ورات مقار بک ئن کم عرد ےل درست 0 سے درس ت ئل سے وگ عددی چ رک وکیل سے اط رکم روخ یکرم مال اورحیزر ہے۔(٣)‏ دوس راخول ہے ےکر عدد ےکی معدودات مقار پوت سم کے طور برفروشتتکرنا ورس گان سے کیوکمہ ان کے افرار یں تاوت ہوتا ے اور عروک متفاوت میں بے سلم چائزنیں ہےءاس لے اس می بھی ےک اڈ موی ۔ ۱

ولنا الخ: اا سے معدودات تقار ہہک کے کم درست ہے اورا درگ ړول سب هکان کے افرادیی تو مرو سے معلوم مقدارہوچاتے ہیں اوریی 1 ےا نکی مقدارمعلوم مو انی ے اورک م کت کے لیے یی ام اورپیادی 7 کٹ ہے ای لیے عدداوریل دوول ط ران 7 تا 7 درست اورچا کی ۔د) مل معدودات کے رد ےآ روشت ہو ےکا و یاو ملین امک ہے »کرای می تبد بی ا کم نہ ہو کےء بک محر ودات تقار ہہلوگوں کے اتھاقی اوران کے تال سے عددبی ہو ہیں اورجھ چرام کے اتنا ے عددی ہو ہووہتھان د بن کے اتقات اور ل ےکی کی موک یت او رکیل ےکی ال کی تق درست اور چات مرگ سے ۔

ھال ہے پات کی ہکن یلع ر ےک ہآ کی معرودات قار کا عرو ے بلنا عا مکی رر کیل سے یلگ ہے رعلا اور پر غل کے اے اتیل ن ے چنا چہ بہت ےشہرول اورعالوں مل اشروٹ ویره عرد سے ثروشت ہو سے چں اور وکر بہت سے شبروں شس وزان سےا نکی کے مون ہے لا جہا ںکا حرف اور رارح ہوگا دہاں اک عرف وروارج کے مطابی تنس مکرنا زیادہ ایا ہوگا۔ وادل انلم دالیم تا کی بست وی _ )

وکذا في الفلوس الخ: اک کل پس کہ مارے بیہاں لوی می عرد سے تن سلم ا ہے مک اہ راگ رواب نے اورجائح سجر س می ہاور ے۔ ی دہال امام صاحب اورنخرات صا ین س بگوام رائے اورم خیال رار و گی ےی نبنض رات نے فلو ہیں عرد سے م کے جوا ورات دنک قول قراردیا ے اورابا مھ وی کے یہاں ا سے اجا رار دیا اورا مگ ول کی رل ہہ بیا نک اگئی ےک فلو ایل ی ہیں اوراشمان میں بی سکم چائنیں ہے. اس لے یں می بھی کے الچ

ولھما الخ: ضرا “تین می کی یل ہے ےکرفکوں میس نمی بدا لی ے دہ عافد بین کے انفاقی تن ول ہے ہڈا اکر عاق ین فو ںکیشمفیت کے بطلان پر اتا ق کرش توا نک مدت اٹل ہو جا ۓےگی اور جب ا نک یمعیت پل ہوا ےکی عددے ان شس ی عم درست اور چا رف ات

داروا لک جب یں می شم وجا E OL‏ ا چرس وزن سے تلم درست ےہ کہ مدد ے؟ فا کا جواب ہے ےکہ عاد بن نے کول یش صر ٹمفیت کے بطلا ن اا قکیا ہے ہکان کے عد دک مو کے

ر (HELLS FARR SOSA O dÎ‏ لان بای لے بطلا ن ہیی کے باوجودکوں مم عددیت باقی ر ےکی اورعدد سے ا نکی بے ملم درست اور چات ہوگی _ اس کچ

ےک راع ت راس اوراا کر ےک کاٹ کی جاے۔ يجوز السَلَّم في ليران رال الشافعٌ ن ا و لان ر مغلم بيان الجنس وَالیْنٍ وَالوْع رَالقَفَ ےسب جو می میں

ر ور و

لاله و فار الْمَعَاِنی الباطنة 3 قيفي إلى 0 لمَتَازَعَةء یخلافِ الاب ره َصنوُع ! ع للعباد 21 يتفاوت

الوب بان إا کک ج على هنو َال راجا وقد صح أن ا٤ك9‏ ا تھی ((عَي السّلَم انا وَيَدَخَلْ جَمیٔع اجتاسه سه حت الْعَصَافیرٌ

رچه: اوران شک کلم انی سے ہام شای ویو ف سے ہی کہ چا ے »وئر کس 620-7 کرو ےے سے حون ن مہا ہے اورا کے بح رکا اوت مون ربتا ہے لباب ےکیڑوں کے مشاب دگیا۔ مھا ری دل مہ ےکہ ہکوہ زی ذکرکر نے کے برک ہی امور کے اختبار سے جوا نکی ماایت میں ناوت فان رتا ہے اس لیے شی الی المنازصہ جن جا گا۔ برغلا فکپروں کے ؛کیوکہ وہ انسافول کے بنائۓ ہو سے ہے ہیں اوراگمہ دوکپٹڑے ایک بی طرز ہے بنائے جا یں تان مٹش بہ تکم قھادت ہوا ے۔ اود ےک ہآ پ نے عیدان میں تق سلم سے ئن ر ایا ہے اورای میں تیوا نکی ہنس وال ہے بیہا ںت کک ہگورتا تھی ۔

اللَات:

سن( مر یسب 4 عام لل ۔ لااب کپڑے۔ ططاحش پچدکھاء دا ۔ زی پہ کات ے۔ [مصنو ع( ے کے ہیں (إنسج )ہے کے امن وال رز _ إعصافیر داص عصفور؛ چ ۔ '

lee ¥ ر‎

- اخرجہ دارقطنی فی ڪتاب البيوع» حدیث: .٥۰٣‏

پالوروں اور پڑڑول شل م

صورت متلہ ہے ےک اریت نے چانوروں میں یع س مکی اورجس چانور م تیک مکی اورا سکیس مشلا گے کرکیاء وی رہ ہونا بیا نکردیاء ای طرح ا یکی ری بیا نکر دیا ینز ا یکی صفت ]شی وبلا اورموٹا ونا ییا نکردیاء اور ای کی نو شلا ہندکی٤‏ اکسا لی اورم فی ہونا میا کروی ق امام شاق وھ کے یہاں اس جیوان می بن کم درست اور ہاگ ےک 20 یبال اس صورت می بھی رکوہ وان یش بی کم درس ت ٹیس ہے۔ امام ا 01 بھی امام شاب ول ھی کے جم خیال ٹیں-(عنایدبتانے)

ق

(_ SLi OR DSO OF لابا‎ :

امام شاق ولیہ کی وکل ہے ےکہ جب چاو ر کیک فوع عمراورصفت با نکرد یکی تز و معلوم المقدار امعد وا اورپ نے بال می ہے بڑھا ےک علوم المقدار اسوق اورم فیہ می یکم درست ہے اس لیے ا یری کے جاور می بھی سم دس اوا اور ان اوصاف کے بیاا نکر نے کے بعد اڈلا ت وکو چہالم یں رپتی اورجھ ججہاات ری کی ےوہ بہت “موب رای ہے جس کاکوئی اتپا رکٹ ہوتاءاس لیے اس ججہال کاک یکو انیس ہوگا۔ او جن طرح اگ رس یکپ ےک یجس نوع اورصفت وغیر معلوم موہ ےار چ رای ٹیل موی ی جہالت رک سے“ مک ہچباتک لم سے ما نیس ہوئی اک طرح 02 ۶ ےی اا ےن ف

ولنا أن الخ: خوان بج 7 عم جواز بر ماری دمل ہے س ےک توان وع > اورصشت بیا نکر نے کے بعد بھی پاضنی اموراوراندروثی اختبار سے ال یس خفاء اور پش کی ری سے چنا مرا درد ی کی طوریرکو یگھوڑا قار ہے اور رورا ای سم رفا ر موتا ہے ای طر کول غلام ز یاد فر ماں بردار ہوتاے اوردوسر!اال ےک ہوتا ہے۔ اوران حوالوں نے لین زی ن اوتا ہے اور ہرووعقد ج شی الی ال زار ہووہ فاسدہوتا ہے ای لے حیوا نکی کے سل ھی فاسدہوگی۔

بخلاف الغیاب الخ: رماتے می ںکہجادروں کے برخلا فک یڑ ے میں جونفاوت مو سے وو وای م ہوا ے اور نہ ہو نے کے در ے میں وا ہے اس لی ےک ہکپٹرے انسمانول کے پات بنا جاتے ہیں او راگ کار یگ ر نیک بی رز یریک سوت کے دوالیکگ الک کے بنانۓ تاس لکوکی فرق نجس ہہوگا۔ اس کے برخلاف ایگ بی برک کے پیٹ سے پرا ہونے دالے دویچو ںکی صفت ۱ یش بھی تر ی وما ے اوران کی مالی تک ملف موی سے ال لے موا نکو تاب بر یکرم درس یں ہے او راب میں لو کم جائتز کن جانوروں یس چا یں ے۔

توانوں ممش ی سلم کے عر م جواز پہ ماری ی دل ہے عد یٹ ے نھی النبی صلی الله عليه وسلم عن السلف في الحیوان گآ نے خان یں بی سلمکرنے ےئ رای سے صاحب بے لعا ےکر ما ا نے اس عد ی تک 6 کی ےاوردانننی ےا یکن ںی اسے ما کیا ے-(۷/ ۲۸ ¢(

اورچو لک رآ پا نے ال حدیت می ملق ا ان ئک مکرنے سے فر ایا ہے بز اس جس دان تام

انان داخل ہو ںگی ھال ی کوت فا ختراورگوریا بھی بی لم بارس ہوی۔

قال ولا في اطرافہ گالرووس َال گارع للتفارّت فيهاء ! اذ هر عدي متفاوّت ت وَل مَفَدُرلَهَاء قال ولا في رآ

اجلو عَددا ولا في الپ جَما ولا في الرَعبَة جُررا لفارت إل ذا عرق ذلك بان ين ر وعم ?وور دی؟د نے 72 ص سا

یشذ به الحزمة انه شبراوذراع فحیۂ فُحینئل جوز إِدَاكانَ على وجه لَايَفَارَّتٌ.

اڑچه: بررجران کے اطراف س جا کیل ہے جیے سراور پانوں ال ل ہکان یش فاوت ہہوتا ہے کیوککہ ہے عد دی متغادت ہیں اورا نکاکو گی انداز مک ے_

0 الب لرا ORA XR TOX‏ بیو کے اکا مکا مان : e‏ سے چات سے ؛کیوکلہ ان میں تفاوت ہوتا ےکر ےک جب کا طول وموش ) معلوم ہوجاۓ بای طو کی س ےکی با ری جاۓے اکا طول ییا نکرد ےک وہ ایک پالشت سے با ایک پت ےل ای وقت تع سلم چائز موی » بش ریک اس طور بے م رک ای میں اوت نمو اللغاتث: ار اف ہہ داحد طرف :کرد کارا وا کار ع داحد ڪر اع؛ ےر ۔ جلو د داعد جلد؛ ڑا ءکھال۔ طحطب چک یاں_ وإجزمة اء بنژل ر طبة )منیا ر ارہ جر رز ا حزمة طشبر وإذراع )#7 کر er‏ وان کے وست و یاء اطراف ور ہک تج : صورت متلہ ہے س ےک ط ررح میوانوں می بن سلم چائ ٹں ا کے امراف شلا سروں اورپیروں یں کی ات 7 درست اور مار میں سے کوک مال لورول کے رول اورپیروں میں لفادوت ۷ت ہے اور ےلقاوت ان 727 مالبت اور 3 مت ر“ ری ار ائراژ ہوا ےا وا سے حیوان کے سم رادرب رعددکی ناوت ہو ۓے اور ایآ آپ ے پڑھا سک عددی تناو تک سم درست یں ے۔ پا حبوان کے مرو اور چبروں یں کی ع م ددست یں ت قال الخ: ا ں کا ماگل ہے س کہ انورو ں کی جوکھالیسء ہوئی ہیں ان میں رار کے ہوانے ےکی ناوت ہوتا سے اور مالیت کے اختبار ےکی وہ ایک دوسرے سے تغادت مون ہیں ای طر حککڑیو ںکا بوتا ہے ان مکی مقدارادد مال اورمالیت پر اپار سے نفاوت ہوتا سے اپےے سب لوں اورجانوروں کے ارو ںکی جوگنڈڑیاں اورمیاں بای انی ٹین ان مم ل کی مقدارء مال اور ہابت رط رح ے نقادت ہوتا ہحےء اں یی ان کن نے می بھی بی سلم درست اور چا نیل وگ عق را راور ابت میں ناو ت وہرے ےسب عددگ ناوت میس رٹل ٹل اورعردی غات میں یا سم ہا ہیں ےب لہاان میں تھی لم جائویں ہوگی۔ الا إذا الخ: صاح بکتاب ال سے اشا رک ے ہہو نے فرماتے کر بی ولم ار یں طول عرش مان کرد ے اورا ری اور بئ رگ نکا ا کی بتار ےک ےر یں او زیی ں کوپ ترما گیا سے خلا وہ پہوضاح کرد ےک بنرگن ایک ہاش تک ے یاایک ذ را کا ے اورا وضاحت کے بع رتاوت تہ رہ چا ےلو ا صورت میس ان چچیزوں میں بی م جاتر 2 ےکن اگ ناوت ر ےک و ری عرم چواز والا